زری پالیسی  

  •  
    SBP Policy Rate
    7.00% p.a.
     
    SBP Overnight
    Reverse
    Repo (Ceiling) Rate
    8.00% p.a.
     
    SBP Overnight
    Repo (Floor) Rate
    6.00% p.a.
  •  
    Overnight Weighted Average Repo Rate
    As on 18-Jan-21
    6.98% p.a.
     
    KIBOR
    As on 19-Jan-21
    Tenor BID OFFER
    3-M 7.05 7.30
    6-M 7.11

    7.36

    12-M 7.20 7.70
         
     

  • MTBs
    Tenor Rates
    3-M 7.1691%
    6-M 7.2002%
    12-M Bids rejected
    (as on Jan 13, 2021)

    PIBs (Fixed Rate)

    Tenor Rates
    3-Y 8.4999%
    5-Y 9.5298
    10-Y 9.9900
    15-Y Bids rejected
    20-Y Bids rejected
    30-Y No Bids
    (as on Jan 06, 2021)

    PIBs (Floating Rate Quarterly)

    Tenor Cut-off Price
    2-Y No Bids
    3-Y 99.0065
    5-Y No Bids
    10-Y Bids Rejected
    (as on Jan 13, 2021)
    GIS (VRR)
    Tenor Cut-off Price
    5-Y 100-0369
    (as on Dec 23, 2020)

  • MTB Auction
    27-Jan-21

     

    PIB (Floating Rate) Auction
    27-Jan-21
    PIB (Fixed Rate) Auction
    03-Feb-21
    As on 08-Jan-21
    SBP’s Reserves
    13,400.0
    Bank’s Reserves
    7,119.0
    Total Reserves
    20,519.0

  •  
    USD/PKR Rates
    As on 19-Jan-21
     
    M2M
    Revaluation Rate
    160.6073
     
    Weighted
    Average Rate
    Bid: 160.3373
    Offer: 160.7005
       
     
 
زری پالیسی کے بارے میں

زری پالیسی کا مطلب یہ ہوتا ہے کہ مرکزی بینک شرح سود پر، اور / یا معیشت میں زر کی رسد پر اثر انداز ہونے کے لیے بعض طریقے استعمال کرے جبکہ مجموعی قیمتیں اور مالی بازارمستحکم رکھنے کا مقصد بھی اس کے پیشِ نظر ہوتا ہے۔ دراصل زری پالیسی استحکام لانے کی، یا طلب کا انتظام کرنے کی پالیسی ہوتی ہے، جو معیشت کی طویل مدتی نمو کی صلاحیت پر کوئی اثر نہیں ڈال سکتی۔ اسٹیٹ بینک آف پاکستان ایکٹ 1956ء کے دیباچے میں کہا گیا ہے کہ زری پالیسی زری استحکام حاصل کرنے کے لیے معیشت کے پیداواری وسائل کا پورا پورا استعمال یقینی بنائے گی۔ ان مقاصد کے حصول کا بہترین طریقہ اسٹیٹ بینک کی رائے میں یہ ہے کہ گرانی کو پائیدار بنیادوں پر پست اور برقرار رکھا جائے۔

(مزید تفصیل کے لیے پڑھیں)


پاکستان میں زری پالیسی فریم ورک

ایس بی پی ایکٹ 1956ء کی تمہید میں اس کے مقاصد بتائے گئے ہیں جس کے مطابق’ اس لیے یہ ضروری ہے کہ پاکستان کے زری اور قرضوں کے نظام کی ضابطہ کاری اور بہترین قومی مفاد میں ان کے نمو کی حوصلہ افزائی کے ساتھ زری استحکام کے حصول اور ملکی پیداواری ذرائع کے بھرپور استعمال کے لیے ایک اسٹیٹ بینک قائم کیا جائے ۔

(مزید تفصیل کے پڑھیں)


زری پالیسی کا فیصلہ ساز ادارہ

زری پالیسی کمیٹی زری پالیسی موقف کا فیصلہ کرنے کی ذمہ دار ہے اور اس کا مکمل اختیار رکھتی ہے۔ ایس بی پی ایکٹ 1956ء کی دفعہ 9 ای زری پالیسی کمیٹی کے اختیارات اور وظائف بیان کرتی ہے جس کے مطابق اس کے کام یہ ہیں:

(مزید تفصیل کے پڑھیں)